بہاریں لوٹ آئیں گی 

442
 ۔ UT انتظامیہ رواں موسم سرما میں پلیڈیم سنیما کو بحال کرے گی
کشمیر کی شان رفتہ کو بحال کرنے کے لیے، ایل جی شری منوج سنہا نے رواں سال اگست میں جموں و کشمیر کی فلم پالیسی کا آغاز کیا۔ ایل جی انتظامیہ کے معتبر ذرائع کے مطابق حکومت سری نگر کے قلب لال چوک میں واقع مشہور پلیڈیم سنیما کو دوبارہ کھولنے پر غور کر رہی ہے۔
سینما گھروں کی بحالی کا فیصلہ ترجیحی بنیادوں پر لیا گیا تھا، کیونکہ ماضی میں سنیما گھر وادی میں تفریح کے بہترین ذرائع میں سے ایک ہوا کرتے تھے، اور یہ مقامی معیشت کو بھی فروغ دینے میں مدد کرتے تھے۔ کشمیر کی سخت سردیوں کے دوران، لوگ عام طور پر بیکار ہوتے ہیں اور اپنے اہل خانہ کے ساتھ گزارنے کے لیے طویل فرصت کے اوقات دستیاب ہوتے ہیں اور بوریت سے وقفہ لینے کے لئے سینما گھر ایک پسندیدہ آپشن ہے۔ہمارے پہلے وزیر اعظم پنڈت جواہر لال نہرو نے ٹھیک کہا تھا کہ ”ہندوستان میں فلموں کا اثر اخبارات اور کتابوں کے مشترکہ اثر سے زیادہ ہے۔“
ذرائع سے پتہ چلتا ہے کہ حکام کشمیر میں سینما گھروں کی اپ گریڈیشن اور تزئین و آرائش پر کام کر رہے ہیں۔ ٹیکنالوجی اور سہولیات کو بڑھایا جا رہا ہے۔ سنیما ہال کھلنے سے کشمیر پر بہت زیادہ مثبت اثرات مرتب ہوں گے۔ 1990 کی دہائی کے بعد سے، کشمیریوں نے تنازعات کا خمیازہ اٹھایا ہے اور وہ کئی طریقوں سے ویران محسوس کر رہے ہیں، باقی ملک اور بیرونی دنیا سے کٹے ہوئے ہیں۔ سینما گھر کشمیریوں کو عام اور خوش حال دنیا کے ساتھ ہم آہنگ ہونے میں مدد کریں گے۔ کشمکش سے تنگ آکر ہم ہنسنا بھول گئے ہیں۔ سنیما جانے کی خوشی ہمیں دوبارہ وہ وہی خوشی کا مقام دلائے گی جس سے ہم تین دہائیوں قبل آشنا تھے۔

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here